7

کرونا کا ہنگامہ ، پاکستانی سکولوں میں بچوں کو گھنٹوں تک دھوپ میں کھڑا کیا جانے لگا ،وجہ کیا بنی

کورونا ایس او پیز کی خلاف ورزی پر سکول سیل، بچوں کو سزا بھی دی گئی۔تفصیلات کے مطابق کورونا سے متعلق ایس او پیز پر عمل درآمد نہ کرنے پر پشاور میں ایک نجی سکول کو سیل کر دیا گیا۔جب کہ بچوں کو ایک گھنٹے تک دھوپ میں کھڑا رہنے کی سزا بھی دی گئی ہے۔پشاور کے پوش علاقے حیات آباد کے ایک نجی اسکول کو کورونا وائرس کے پیش نظر حفاظتی اقدامات نہ کرنے پر اسٹنٹ کمشنر حبیب اللہ نے سیل کیا،جب کہ بچوں کو کندھوں پر ان کے بستے رکھ کر ایک گھنٹے تک دھوپ میں کھڑا بھی رکھا گیا۔ بچوں کو سزا کے طورپر دھوپ میں کھڑا رکھنے پر اسکول ٹیچر اور اسسٹنٹ کمشنر کے مابین تکرار بھی ہوئی۔اسکول ٹیچر کا کہنا تھا کہ بچوں کو دھوپ میں کھڑا کرنا غیر انسانی رویہ ہے۔ اسسٹنٹ کمشنر کا موقف ہے کہ ایس او پیز کی خلاف ورزی پر صرف اسکول کو سیل کیا گیا کسی بچے کو سزا نہیں دی گئی۔ خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور کی ضلعی انتظامیہ نے کورونا ایس او پیز کی خلاف ورزی کرنے پر متعدد میگا مالز، مارکیٹیں، اسکولز اور شادی ہالز سیل کردئیے۔ ڈپٹی کمشنر پشاور کے مطابق ضلعی انتظامیہ نے کورونا ایس او پیز کی بار بار خلاف ورزی پر 14 میگا مالز، 13 اسکولز، چار شادی ہالز اور مختلف مارکیٹیں سیل کردئیے۔ ڈپٹی کمشنر پشاور کے مطابق دکاندار اور عوام بازاروں میں سیفٹی ماسک کا استعمال یقینی بنائیں اور مارکیٹوں اور مالز میں رش نہ لگائیں۔ڈپٹی کمشنر پشاور نے کہا کہ کورونا ایس او پیز کی خلاف ورزی پر کاروائیاں جاری رکھی جائیں گی۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے مطابق پاکستان میں کورونا وائرس کے زیرعلاج مریضوں کی تعداد 8ہزار 335 رہ گئی ہے اور 3 لاکھ دو ہزار708 صحتیاب ہو چکے ہیں۔ نیشنل کمانڈ اینڈ اذپریشن سینٹر کے مطابق گزشتہ روز ملک میں کورونا کے 661 نئے کیسز اور 8 اموات رپورٹ ہوئی ہیں۔پاکستان میں کورونا سے جاں بحق افرادکی مجموعی تعداد 6ہزار552 ہوگئی ہے اور اب تک3 لاکھ17ہزار 595 کیسز رپورٹ ہوئے۔اسلام آباد میں کورونا کیسز کی تعداد 17 ہزار122ہو گئی ہے۔ پنجاب ایک لاکھ3302، سندھ میں ایک لاکھ 39 ہزار 557، خیبرپختونخوا میں38 ہزار219، بلوچستان میں 15 ہزار480، گلگت بلتستان میں 3 ہزار 893 اور آزاد کشمیر میں 2 ہزار 980 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں